جسم کے مختلف اعضاء کا سو جانا

soo جسم کے مختلف اعضاء کا سو جانا

ٹانگیں اور بازو سو جانے کی وجہ یہ ہے، کہ دل کی شریانیں سوزش کی وجہ سے تنگ ہو جاتی ہیں۔ اس وجہ سے خون کا پریشر کم ہو جاتا ہے، جو دل سے دور کے اعضاء تک نہیں پہنچ پاتا، اورانہیں تغذیہ نہ ملنے کی وجہ سے یہ اعضاء  رہتے ہیں۔ (soo)سن

تخدیر اعصاب کی وجہ سے کندھوں کے پٹھوں کے ساتھ ساتھ ٹانگوں اور بازوؤں کے پٹھے بھی سن ہو جاتے ہیں۔

سوتے ہوئے جسم کا سو ہوجانا

اکثر لوگوں کو صبح اٹھ کے اپنا جسم بالکل سن  ہوا ہوتا ہے۔ جسم کے تمام مسلز سوے ہوتے ہیں، کہ بستر سے اٹھنے بھی نہیں ہوتا۔ اس عمل کو سلیپ پیرالائز کہا جاتا ہے۔

دماغ کا سو جانا
دماغ سو جانے کی وجہ یہ ہے کہ خون کی رگیں بلاک ہو جاتی ہیں۔ اس سےخون گردش نہیں کر سکتا تو دماغ سو جاتا ہے۔
زیادہ تر ہاتھ پیر کا سن ہونا ٹشوز پراورخون کا زیادہ دباؤہنے کی وجہ سے ہوتا ہے۔ یا پھر غلط انداز میں  بیٹھنے سے ایسا ہو جاتا ہے۔ اور ایسانروزپر دباؤ سےبھی ہوتا ہے۔ یہ کیفیت کسی بیماری جیسے شوگر کی وجہ سے بھی ہوتی ہے۔
 گردن میں رکے ہوئےنروز بھی جب ہاتھوں تک نہیں پہنچ پاتے، تو ہاتھ اور انگلیوں کے سن ہوجاتے  ہیں۔ اس طرح کلائی کے نروز دباؤ کی وجہ سے ہاتھ کی سن کردیتی ہیں ۔

 مختلفsoo اعضاء کےسو جانے کا علاج
کچھ ادویات بھی نروزکو نقصان پہنچاتی ہے اور یہ تکلیف دوا کےچہوڑنے کے بعد ختم ہو جاتی ہے۔ چھاتی کے کینسر کے علاج کے لیے کی جانے والی کیموتھراپی اوراستعمال ہونے والی ادویات بھی ہاتھ پیروں کو سن کرنے کی وجہ بن جاتی ہیں ۔
ہمیں وٹامن بی کی کمی کو بھی پورا کرنا چاہیے۔ اس سے ہمارے جسم کے تمام اعضاء ٹھیک ہو جائیں گے۔